مریض جس کو کرونا وائرس، ٹائیفائیڈ اور معدے کا السر ہو، بچنے کی امید دو فیصد

مریض جس کو کرونا وائرس، ٹائیفائیڈ اور معدے کا السر ہو، بچنے کی امید دو فیصد تحریر: ڈاکٹر محمد نواز خان ناظرین یہ تحریر ہر طبقہ فکر مریض،معالج اور انسانیت کے وجود کیلئے پڑھے گا اُس کا ایمان اللہ پر اُسکی قدرت پر اور اُس ذات پر خودبخومضبوط ہوگا کہ وہ رحمن بھی ہے اور رحیم بھی ہے ایمان مضبو ط ہوگا۔ بحیثیت انسان اپنے آپ سے سوال کرتا ہوں، انسان کو زندگی کس نے دی اللہ نے، موت کون دے گا اللہ، موت کے وقت کا تعین کون کریگا اللہ، بیماری کون لگائے گا اللہ، شفاء کون دے گا اللہ، کس نے قرآن پاک میں فرمایا اللہ نے انسان کیلئے کوئی بیماری نہیں بھیجی جس کی دوا نہ بھیجی ہو تو پھر میں اور پوری دنیا یہ کیوں کہتی ہے کہ کرونا وائرس کا علاج نہیں ہے۔ کیا یہ بات شرک کے کھاتے میں نہیں چلی جاتی اللہ کہے کہ دوا موجود اور ہم کہہ دیں دوائی نہیں جس کے ساتھ مریض کا علاج کیا جائے۔ آپ کی آسانی کیلئے دوائی کیسے بنائی جاتی ہے مختصر تصور تاکہ بات ناظرین کے سمجھنے کیلئے آسان ہو جائے۔ دوائی کا اسٹریکچر تیار کرنے سے پہلے دیکھا جاتا ہے کہ کوئی بھی جرثومہ کس طرح کی خوراک کھانے کے چکر میں ہوتا ہے۔ میڈیکل سائنس اُس کو دو طرح سے دھوکہ دیتی ایک اُس کے انسانی خلیہ کے اندر جانے کی خوراک کا راستہ بند کرکے تاکہ اس کے کھانے کا راستہ بند ہو جائے اور وہ بھوکا پیاسا مر جائے اُس کو ہم کہیں گے Static Method، دوسرا طریقہCidialیعنی دوائی اندر گئی اور اُس کو اندر ہی مار دے گی وہ سوچے کا مجھے میری غذا مل گی جب کہ یہ اس کیلئے زہر ہوگا جو کھائے گا اور مر جائے گا۔ یہ بہت ہی عام الفاظ ہیں ہر ایک کے سمجھنے کیلئے ہیں۔ میں بہت ٹیکنیکل الفاظ کی طرف نہیں گیا تاکہ کم پڑھا لکھا آدمی بھی بات کو سمجھ جائے۔ ناظرین سورۃ الرحمن کی چار باتیں پھر کالم کا باقی حصہ،رحمن کیا ہے اللہ کا اپنے لیے پسندیدہ نام اس کے معنی رحمت، حضور پاک (ﷺ) نے فرمایا کوئی آدمی اس وقت تک جنت میں داخل نہیں ہوگا جب تک اللہ کی رحمت اس کی دستگیری نہ کرے،کسی صحابی ؓ نے جرت کرکے پوچھ لیا کیا حضور (ﷺ) آپ بھی، فرمایا کوئی شخص داخل نہیں ہوسکتا اپنے اعمال کی بنیاد پر جب تک اللہ کی رحمت نہیں ہوگی اسی طرح میں بھی۔ رحمن نے قرآن سیکھایا جو بھی علم ہے کس نے دیا اللہ نے سائنس کا علم کس نے دیا اللہ نے باقی علم کس نے دیئے اللہ نے بس ہر طرح کا علم جو اللہ تعالیٰ دینا چاہے تمام علوم میں چوٹی کا علم قرآن، انسان کو پیدا فرمایا سوال ہے باقی چیزوں کو کس نے پیدا کیا مثلاً فرشتے زمین آسمان پودے باقی تمام جاندار سب اللہ نے لیکن تخلیق انسان اس کا عروج ہے۔ انسان کو بیان کی صلاحیت عطا کی آنکھیں دی دیکھنے کیلئے کان دیئے سننے کیلئے دل دیئے سوچنے کیلئے اسکے علاوہ جسم کے اندر اور باہرپوری پوری فیکلٹیز ہیں۔ یہ باتیں ایمان اور یقین کرنے کیلئے لکھی کوئی ڈاکٹر کچھ نہیں جانتا جب تک اللہ کی طرف سے دانائی نہ ملے یہ مرض کی تشخیص خالصتاً دانائی ہے اور یہ عظیم نعمت ہے۔ اللہ تعالیٰ جس سے بھلائی کرتا ہے حکمت عطا کرتا ہے جس کو سیدھے راستے پر چلانا چاہتا ہے اس کو ہدایت دینا۔ قرآن پاک میں مکھی کے پیدا کرنے کی مثال دی گئی ہے کہ سب مل کر ایک مکھی نہیں پیدا کرسکتے ہو بلکہ اگر وہ تمہارے ہاتھ سے کوئی چیز لے جائے تو تم اس سے وہ بھی واپس نہیں لے سکتے۔ اس ساری تمہید کا مطلب یہ ڈاکٹر ز فارماسسیٹ نرسنگ اسٹاف مریضوں کے ساتھ پیا ر کریں محبت کریں پیار سے بات کریں مریضوں کی دلجوئی کریں جب آپ اس کو عزت دیں گے تو اللہ تعالیٰ آپ کو عزت دیں گے۔ مشکل ترین وقت میں مریضوں کی دعائیں آپ کو بھی اللہ تعالیٰ زندگی کے آخری لمحات سے واپس صحت مند زندگی کی طرف لے آئیں گی۔ حضرت محمد (ﷺ) کا طریقہ یہ تھا کہ مریض کو دیکھتے اللہ تعالیٰ سے دعا کرتے، اے عر ش عظیم کے مالک تیری بارگاہ الٰہی میں دعا کرتا ہوں کہ اگر اس مریض کی زندگی ہے تو اس کا شفاء دے اور اگر زندگی نہیں تو اس کے لیے آسانی پیدا کرے۔ ناظرین تقریباً چار ہفتے سے میں نے ڈیوٹی نہیں کی ایک ہی وقت میں اللہ پاک نے امتحان میں ڈال دیا۔ ایک ہی ساتھ تین بڑی بیماریاں کرونا وائرس کا حملہ ساتھ ہی ٹائیفائیڈ اور معدہ کا السر یہ 06,05,04جون سے شروع ہوا 07جون کو ٹمپریچر یعنی بخار 105تک پہنچ گیا رات کو جب مجھے زیادہ تکلیف ہوئی تو بے ہوشی کے عالم میں میں نے اپنے آپ سے سوال کیا کہ حضرت محمد (ﷺ) کے وصال کی وجہ یہ بخار ہی تھا اور اب شاہد میرا بھی آخری وقت ہے۔ اللہ سے اپنے کیے گناہوں کی معافی مانگ لینی چاہیے۔ بہرحال خود بھی کرونا وائرس پر کئی کالم لکھ چکا تھا ساتھ ہی جب سے کرونا وائرس کی وباء آئی میری بیٹی ڈاکٹر آمنہ نواز کو بھی ڈی ایچ او صاحب نے انچارج بنا دیا اس طرح وہ بھی اس وباء کے بارے میں کافی حد تک اسٹیڈی کرچکی تھی۔ میں نے بیٹی سے کہا کہ مجھے اگرہسپتال لے گئی تو واپسی پر لاش ہی واپس لے آؤ گی۔ جو کچھ ہو گیا ہے گھر پر اس کے ساتھ خود ہی علاج معالجہ کریں گے۔ اللہ تعالیٰ نے شفاء دینی ہو تو دے دیگا اور اگر مر گیا تو بالکل اسلام کے طریقہ کے مطابق کفن دفن کردینا اور اگر کسی نے مداخلت کی تو قیامت کے دن میرے ہاتھ ہونگے اور دوسرے کے گریباں چونکہ جس طریقہ سے مسلمان مرنے والے یا مرنے والی کے ساتھ ہوتا اسلام میں تو کئی اس طرح کا تصور تک نہیں ہے۔ علماء سے ایک کالم لکھ کر التجاء کی تھی کہ قرآن پاک کی سورۃ بقرہ آیت نمبر 113پڑھ کر مسلمان حکمرانوں کی راہنمائی کریں مگر عالم اسلام میں کسی کو جرت نہیں ہوئی کہ وہ حکومت کی راہنمائی کرتے۔ 07-06-2020کو میں نے ایک دوائی کا استعمال شروع کیا چونکہ کرونا وائرس پھپھڑوں کی نمونیہ ہے اس وقت میرے نزدیک Linezolidسے بہتر کوئی دوائی نہیں چونکہ یہ سالٹ نیا ہے اور کم استعمال ہے اور Panadolاور Prednisolneٹیبلٹ تین دن استعمال کی لیکن ساتھ ہی سخت سردی اور پسینہ بھی آنے لگا۔ میں نے سوچا ساتھ ہی ٹائیفائیڈ اور H-Pyloricٹیسٹ بھی کروا دیتا ہوں۔16-06-2020کو وہ دونوں ٹیسٹ بھی +veآگئے۔ لہٰذا میں نے یہ دیکھ کر بیٹی کی مشاورت سے Cefixime 400mgشروع کی پانچ دن کے بعد آفاقہ نہ ہوا تو پھر Levofin 500mgتین دن پھر جب منہ کے ذریعے دوائی لینے کے قابل نہ رہا تو Inj Claforan 2gmصبح شام ساتھ Inj Solucortifمورخہ 23-06-2020کو Covid-19ٹیسٹ کروایا تو +veتھا۔ اتنا لیٹ یہ ٹیسٹ کیوں کروایا اس پر انشاء اللہ پورا کالم لکھوں گا تاکہ لوگوں کو بھی آگاہی حاصل ہو تاکہ لوگوں کو پتہ چلے کہ کون سے ٹیسٹ کس وقت ہو تو زیادہ بہتر ہوتا ہے۔ Covid-19ٹیسٹ کے پھر دوائی تبدیلی کی چار دن Inj Moxifloxacinپھر پانچ دن ٹیبلٹ ایک چیز نوٹ کرنے کی ہے یہ وائرس سائنس کی نالی کے اوپر بیٹھتا ہے اور جب آدمی سائنس لیتا ہے تو اس کا گلہ دباتا ہے اور کہتا ہے دوبارہ سائنس لے کر تو دیکھو،یہ جو کچھ میں نے لکھا یہ صرف ڈاکٹر فارماسسیٹ اور نرسنگ اسٹاف کیلئے اگر کوئی مریض اپنی مرضی سے سٹور سے لے کر کھائے گا تو اس سے بڑا جرم کوئی نہیں ہوگا میں نے جو کچھ کیا بحیثیت ماہر ادوایات اور ڈاکٹروں کی نگرانی میں کیا۔ میں اپنے بہن بھائیوں دوستوں کا اور مریضوں کا جن کی دعاؤں سے اللہ تعالیٰ نے مجھے دوبارہ زندگی دی سب لوگوں نے آئیسولیشن میں میرا مشورہ مانا میں نے کہا کہ میں متاثر ہو گیا ہو خداراہ ادھر آکر اپنے آپ کو متاثر نہ کرنا، میری بیگم نے بیٹی نے بیٹے نے ڈاکٹر تنویر ان کے بھائی سجاد اور خاص کر سیاب عالم، مقبول حسین نے جو میری دیکھ بھال کی اللہ تعالیٰ ان کو اس کا اجرو ثواب دے میں اللہ کے فضل سے 90فیصد ریکور ہو گیا ہوں عام کمزوری ہے انشاء اللہ ہفتے دس دن میں ٹھیک ہو جاؤں گا۔ پھر اپنی خدمات پیش کروں گا۔ ابھی جب بیٹی سے کہتا ہوں کہ اب تو ڈیوٹی کروں گا تو وہ اپنی آنکھیں موٹی کرکے میرے چہرے کی طرف دیکھتی ہے اورکافی آنسوں بہاتی ہے اور مجھ سے سوال کرتی ہے کہ ابو آپ کو پتہ ہے آپ کو اللہ تعالیٰ نے کہاں سے واپس زندگی دی ہے آپ تو صبر سے لیٹ گئے تھے اف تک نہیں کررہے تھے ابھی اپنے ربّ کا شکر ادا کریں اور آرام کریں۔ آئندہ انشاء اللہ کرونا وائرس کی ٹیسٹوں کے شیڈول اور کیا غذائیں کھانی چاہیں اس پر سیر حاصل بحث ہوگی۔ آخر میں حکومت سے میری اپیل ہے کہ کرونا وائرس جائے گا نہیں جس طرح ہم خسرہ، Mumps، Cheken Pox، کینسر، ٹی بی اور بیماریوں کے ساتھ زندہ ہیں اس کی کبھی ویکسین نہیں آئے گی چونکہ ہر جگہ اس کی شکل مختلف ہے۔ آپ ویکسین کا کون سا اسٹریکچر تیار کریں گے جب آدمی پورے طور پر اس کے قابو میں ہوتا ہے وہ مختلف قسم کی شکلیں خواب میں آتی ہیں اور انسان جھٹکے سے اچھلتا ہے۔ اللہ تعالی اپنے آمان میں رکھے۔

متعلقہ کالم ، مضامین اور اداری