پاکستان نے ٹرافی کا خواب آنکھوں میں سجا لیا

پاکستان نے ٹرافی کا خواب آنکھوں میں سجا لیا لگاتار 4شکستوں کے بعد گرین شرٹس نے پہلی اور آخری فتح گزشتہ ٹور میں حاصل کی۔ فوٹو: فائل لاہور: پاکستان نے 2013کے بعد مسلسل دوسری سیریز میں میزبانوں کو زیر کر کے ٹرافی پانے کا خواب آنکھوں میں سجالیا۔ پاکستان اور جنوبی افریقہ کے مابین ون ڈے سیریز 2-2سے برابر ہے، پورٹ الزبتھ میں کھیلے جانے والے پہلے میچ میں مہمان ٹیم نے5وکٹ سے فتح سمیٹی، ڈربن میں فلاپ بیٹنگ شو کے بعد پروٹیز نے بھی اسی مارجن سے کامیابی کے ساتھ بدلہ چکا دیا، ہدف کم ہونے کے باوجود پاکستان نے 80پر نصف بیٹنگ لائن کو پویلین بھیج دیا تھا لیکن خوش قسمتی سے اینڈل فیلکوایو کئی بار آؤٹ ہونے سے بچے، اس صورتحال میں سرفراز احمد کے متنازع جملے4میچز کیلیے معطلی کا سبب بن چکے ہیں۔ تیسرے میچ میں پاکستانی بیٹنگ ایک بار پھر بھرپور فارم میں نظر آئی اور 300 سے زائد رنز کیے لیکن پہلی بار بارش کے بعد دوبارہ کھیل شروع ہواتو ریزا ہینڈرکس اور فاف ڈوپلیسی نے رن ریٹ قابو میں رکھا، دوبارہ موسم خراب ہونے پر ڈک ورتھ لوئس میتھڈ پر فتح میزبان ٹیم کا مقدر بن گئی۔ جوہانسبرگ میں پنک ڈے میچ میں پاکستان ٹیم شعیب ملک کی قیادت میں میدان میں اتری اور تینوں شعبوں میں مکمل طور پر حاوی نظر آئی، یوں سیریز 2-2سے برابر ہوگئی، کیپ ٹاؤن میں بدھ کو پانچواں اور آخری میچ فیصلہ کن ہوگا۔گزشتہ دورئہ جنوبی افریقہ میں پاکستان نے ون ڈے سیریز2-1سے اپنے نام کی تھی۔ نومبر 2013 میں کھیلے جانے والے میچز میں مصباح الحق کی قیادت میں گرین شرٹس کیپ ٹاؤن اور پورٹ الزبتھ میں سرخرو ہوئے، سیریز ہارنے کے بعد سنچورین میں کھیلے جانے والے میچ میں پروٹیز نے اپنا خسارہ کم کیا۔ اب پاکستان کے پاس مسلسل دوسری سیریز میں پروٹیز کو شکست دینے کا موقع ہے، ٹیم نے پیر کوکیپ ٹاؤن میں ڈیرے ڈال دیے،قیادت ایک بار پھر شعیب ملک کے سپرد اور کھلاڑی آخری معرکہ سر کرنے کیلیے پُر عزم ہیں۔ جوہانسبرگ میں زبردست فارم میں نظر آنے والی پاکستان ٹیم کی بولنگ نے پروٹیز پر اپنی دھاک بٹھاتے ہوئے 200 کا سنگ میل بھی عبور نہیں کرنے دیا، بیٹسمینوں نے بھی آسان ہدف حاصل کرنے میں کوئی غلطی نہیں کی اور صرف 2 وکٹ پر منزل تک پہنچ گئے،اب کیپ ٹاؤن میں یہی کارکردگی دہرانا پڑے گی۔دوسری جانب جنوبی افریقہ کو اپنے کھلاڑیوں کی تھکن پریشان کرنے لگی ہے۔ چوتھے ون ڈے میں شکست کے بعد پروٹیز کپتان فاف ڈوپلیسی نے کہاکہ ہمارے کیمپ میں کچھ کھلاڑیوں کی تھکن کے حوالے سے تشویش پائی جا رہی ہے، چوتھے میچ میں ہم نے اوسط درجے جبکہ پاکستان نے بہترین کرکٹ کھیلی۔ انھوں نے کہاکہ ہم ٹی ٹوئنٹی سیریز میں چند پلیئرز کو آرام دینے کی کوشش کریں گے۔ کیپ ٹاؤن میں باہمی مقابلوں کا مجموعی ریکارڈ میزبان ٹیم کے حق میں ہے،یہاں کھیلے جانے والے 5میچز میں پروٹیز نے 4فتوحات حاصل کی ہیں، مہمان صرف ایک بار گزشتہ دورے میں فتح کو گلے لگا سکے تھے، نیولینڈز اسٹیڈیم میں پاکستان نے سب سے بڑا ٹوٹل 231 دسمبر 2002 میں بنایا تھا، یہاں سب سے کم اسکور 107 پر گرین شرٹس فروری 2007 میں ڈھیر ہوئے تھے۔ گزشتہ ٹور میں یہاں پاکستان ٹیم نے پہلی اور آخری کامیابی حاصل کی تھی،23سے اس فتح کو بھی غیرمتوقع کہا جاسکتا ہے، پاکستان نے اپنی 7وکٹیں صرف 131 رنز کے سفر میں گنوا دی تھیں، اس موقع پر انور علی نے ناقابل شکست 43 اور بلاول بھٹی نے 39 رنز کی اننگز کھیلتے ہوئے پاکستان کا مجموعہ 9 وکٹوں کے نقصان پر 218 رنز تک پہنچایا، ڈیل اسٹین اور مورنے مورکل 3، 3، جیک کیلس 2 وکٹیں لے اڑے تھے۔ جواب میں جنوبی افریقہ کی پوری ٹیم 195 تک محدود رہی، جیک کیلس کی ففٹی اور پال ڈومینی کے 49 رنز ناکافی ثابت ہوئے، بیٹ کے بعد بال سے بھی زبردست کارکردگی کا مظاہرہ کرتے ہوئے بلاول بھٹی 3 اور انور علی 2شکار کرنے میں کامیاب ہوئے، سعید اجمل 2، جنید خان، محمد حفیظ اور شاہد آفریدی ایک ایک وکٹ لے اڑے تھے۔ اس میدان پر پاکستان کیلیے مثبت پہلو گزشتہ باہمی مقابلے میں کامیابی ہے، اسی کے تسلسل کو برقرار رکھتے ہوئے گرین شرٹس سیریز فیصلہ کن میچ میں فتح حاصل کرنے کی کوشش کریں گے۔

متعلقہ خبریں

13-03-2018

13-03-2018