راولاکوٹ، پرائیویٹ تعلیمی اداروں نے ایسا کیا کیا کہ والدین سراپائے احتجاج ہو گئے

راولاکوٹ(پرل نیوز) راولاکوٹ شہر اور رد ونواح میں قائم پرائیویٹ تعلیمی اداروں نے ایک با ر پھر نئے تعلیمی سال کے آغاز پر فیسوں میں اضافہ کر دیا ہے ۔ فیسوں میں اضافہ کی وجہ سے طلبہ وطالبات کے والدین اور ورثا ء میں تشویش کی لہر دوڑ گئی ہے انہوں نے حکومت آزادکشمیر ، وزیر تعلیم ، محکمہ تعلیم کے ذمہ داران اور انتظامیہ سے مطالبہ کیا ہے کہ پرائیویٹ تعلیمی ادارو ں کو بھی قواعد و ضوابط کا پابند کیاجائے آئے روز مرضی سے بڑھائی جانے والی فیسوں کا سختی سے نوٹس لیاجائے اور فیسیں کم کراوئی جائیں تاکہ عام لوگو ں کے بچے بھی ان اداروں میں تعلیم حاصل کر سکیں ۔ان والدین اور ورثا ء کا کہنا ہے کہ نئے تعلیمی سیشن پر فیسیں بڑھانا ، ایک فیشن بن گیا ہے اور سال کے مختلف اوقاف میں پرائیویٹ تعلیمی اداروں کی طرف سے مختلف مد میں اضافی فیسیں بٹور نے کا سلسلہ بھی جاری رہتا ہے جس کی وجہ سے عام آدمی کے بچوں کا ان تعلیمی اداروں میں تعلیم جاری رکھنا مشکل سے مشکل تر ہوتا جارہا ہے ۔انہوں نے مطالبہ کیا کہ پرائیویٹ تعلیمی اداروں کی طرف سے آئے روز بڑھائی جانے والی فیسوں کا نوٹس لیاجائے اور زائد فیسیں بٹورنے والے پرائیویٹ تعلیمی ادارو ں کے خلاف کاروائی کی جائے ورنہ والدین سخت احتجاج سے بھی گریز نہیں کریں گے ۔

متعلقہ خبریں

13-03-2018

13-03-2018