ایکٹ74میں ترامیم کے لیے کمیٹی قائم نوٹیفکیشن جاری

مظفرآباد (پرل نیوز) وزیراعظم آزاد حکومت ریاست جموں وکشمیر راجہ محمد فاروق حیدر خان نے ایکٹ1974میں ترامیم کے لیے خصوصی کمیٹی کی تشکیل پر وزیراعظم پاکستان میاں محمد نواز شریف کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا ہے کہ آزادکشمیر کے عوام نے مسلم لیگ ن کو جو مینڈیٹ دیا ہے قائد مسلم لیگ ن نے وہ قرض چکا دیا ہے۔ریاست کے لیے جو پالیسیاں بنائی جارہی ہیں ماضی میں ان کی مثال نہیں ملتی۔آزادکشمیر میں مقامی نوعیت کے معاملات کو بہتر کیا جارہا ہے فیملی کورٹس بنا دی گئی ہیں اب فیصلہ 120دن میں ہوگا۔خواتین کا وارثت میں حصہ یقینی بنانے اور دیگر حوالوں سے انہیں سہولیات فراہم کرنے کے لیے خصوصی اقدامات کیے جارہے ہیں تحریک آزادی کشمیر موجودہ حکومت کی اولین ترجیحات میں شامل ہے۔ حکومت پاکستان کی کشمیر پالیسی درست ہے وزیر اعظم پاکستان میاں محمد نواز شریف نے قومی اور بین الاقوامی سطح پر مسئلہ کشمیر پر جاندار موقف اختیار کیا ۔حریت قیادت پاکستان کی کشمیر پالیسی پر اعتماد کا اظہار کرتی ہے ۔وزیراعظم ہاؤس میں مقامی اخبار ات کے چیف ایڈیٹروں اور ایڈیٹروں کے ساتھ خصوصی ملاقات میں وزیراعظم آزادکشمیرنے اس امر پر زور دیا کہ خبر کی تحقیق ضروری ہے۔محض سنی سنائی بات کو پھیلانا کسی طور پر مناسب نہیں ہوتا۔قومی نوعیت کے معاملات میں پریس کو زمہ دارانہ رپورٹنگ کرنی چاہئے۔حکومتی اقدامات پر تنقید کریں مگر نیت پر شبہ درست نہیں۔ تنقید برائے اصلاح کا ہر سطح پر خیر مقدم کریں گے۔آزاد کشمیر کی ریاست کو معاشی طور پر خود کفیل اور خوشحال بنانے کے لئے ضروری ہے کہ تمام مکاتب فکر اپنا حصہ ڈالیں۔ اقتدار سنبھالا تو میرے پاس دو راستے تھے ایک یہ کہ روئتی طریقہ کار پر چلتے ہوئے پانچ سال پورے کرتے۔ دوسرا یہ کہ عوام کے حقوق کی بحالی اور عام آدمی کی فلاح و بہبود اور میرٹ کی بحالی کے ذریعے عوام الناس کی خدمت کی جائے۔ ہم نے دوسرا راستہ چنا جو کہ روایت سے ہٹ کر ہے۔ مگر اس سے غریب اور عام آدمی کے مسائل حل ہوں گے۔ کارکنوں کی قربانیوں اور محنتوں کی بدولت حکومت ملی ۔ بلدیاتی انتخابات کے ذریعے گراس روٹ لیول تک اقتدار منتقل کر کے کارکنوں براہ راست حکومت میں شامل کر کے انھیں فیصلہ سازی میں شامل کریں گے ۔ ملاقات میں پرنسپل سیکرٹری احسان خالد کیانی،ڈائریکٹر جنرل تعلقات عامہ راجہ اظہر اقبال ،پرنسپل سٹاف آفیسر راجہ ارشد حسین،سیدآفاق حسین شاہ،واحد اقبال بٹ،سردار ذوالفقار علی،ظہیر احمد جگوال،سرفراز خواجہ،دلپذیر عباسی،راجہ شجاعت حسین،پر یس سیکرٹری راجہ وسیم،پی پی او سردار علی شان کے علاوہ راولپنڈی سے خالد گردیزی اور شہزاد خان بھی موجود تھے۔اس موقع پر وزیراعظم آزادکشمیر راجہ محمد فاروق حیدر خان نے ڈائریکٹر جنرل اطلاعات کو ہدایت کی کہ وہ ترقیاتی میزاینے کا ایک فیصد محکمہ اطلاعات کو منتقل کرانے اور اشتہارات کو تنخواہوں سے مشروط کرنے کے حوالہ سے اقدامات کریں۔وزیراعظم نے اس موقع پر آزادکشمیر میں ٹریفک کے مسائل اور صفائی کے مسئلہ پر خصوصی توجہ دینے کے حوالے سے کہا کہ اس سلسلہ میں انہوں نے متعلقہ حکام کو احکامات جاری کردیئے ہیں ۔انہوں نے کہاکہ آزادکشمیر کے سکولوں میں 13ہزار جبکہ کالجز میں 900سے زائد اساتذہ کی ضرورت ہے ایک ہیڈ ماسٹر اور پرنسپل سے سکول اور کالج نہیں چلائے جاسکتے ۔انہوں نے کہاکہ لوڈشیڈنگ کے مسائل جلد حل کرلیے جائیں گے واپڈا کے ساتھ معاملات بہت بہتر انداز میں طے کیے جارہے ہیں ۔حکومت میڈیا کو خصوصی اہمیت دیتی ہے اور ریاستی میڈیا کے جملہ مطالبات پر سنجیدگی سے غور کیا جائے گا تاہم قومی مسائل پر اتحاد واتفاق ضروری ہے ۔وزیر اعظم آزادکشمیر راجہ محمد فاروق حیدر کا کہنا تھا کہ وزیر اعظم پاکستان میاں محمد نواز شریف کی خصوصی دلچسپی سے آزاد کشمیر کو سی پیک میں شامل کیا گیا ہے۔ سی پیک کے تحت منظور ہونے والے منصوبوں کی تکمیل سے آزاد کشمیر ترقی اور خوشحالی کی نئی راہ پر گامزن ہو گا۔ ریاست کو خود کفالت کی منزل سے ہمکنار کرنے کے لئے سیاحت اور پن بجلی کے شعبوں پر خصوصی توجہ دی جا رہی ہے۔ اس حوالے سے ٹھوس حکمت عملی اختیار کی جا رہی ہے۔ ٹور ازم کوریڈور کے منصوبے کی تکمیل سے آزاد کشمیر میں سیاحت کے شعبے کو فروغ ملے گا اور روز گار کے وسیع مواقع پیدا ہونگے۔ ہائیڈرل کے مزید تین منصوبوں کو سی پیک میں شامل کر لیا گیا ہے۔ آزا د کشمیر کے معدنی وسائل کی ترقی کے لئے پاکستان منرل ڈیولپمنٹ کارپوریشن سے معاہدہ کیا ہے۔ جس سے معدنیات کی جدید بنیادوں پرنکاسی ممکن ہو سکے گی۔اور ریاست کی آمدن میں معقول اضافہ ہو گا۔

متعلقہ خبریں

13-03-2018

13-03-2018