گاڑیوں پر گنجائش سے زائد بچے بٹھائے جانے لگے

راولاکوٹ(جنرل رپورٹر)شفٹ والی گاڑیوں پر بچوں کو بھیڑ بکریوں کی طرح ٹھونسا جانے لگا ،انڈین گانے بچوں کے مزاج اور کردار میں بگاڑ کا سبب بن سکتی ہیں والدین ،انتظامیہ کی چشم پوشی قوم کے مہماران کا مستقبل داو پر لگاسکتے ہیں تفصیلات کے مطابق راولاکوٹ میں متعدد پرائیویٹ تعلیمی ادارہ جات کے پیش نظر شفٹ والی گاڑی مالکان کی چاندی ہوگئی منہ مانگے دام لوگوں سے وصول کیے جارہے ہیں ساتھ ہی ظلم یہ کہ انڈین گانے صبح سویرے اور واپسی پر جاتے ہوئے اونچی آواز میں لگادیے جاتے ہیں ساتھ ہی چند سیٹوں پر مشتمل گاڑیوں میں بچوں کوبھیڑ بکریوں کی طرح گھسیڑا جاتا ہے جس باعث بوجوہ گرمی بچوں کا برا حال ہوجاتا ہے والدین بھی اس معاملہ میں خاموش تماشائی کا کردار ادا کررہے ہیں بعض بچے شفٹ کی گاڑیوں پر لٹک کر آتے ہیں ذی شعور طبقہ نے مطالبہ کیا ہے کہ انتظامیہ شفٹ مالکان کو ضرورت سے زائد بچے بٹھانے پر سخت ترین نوٹس جاری کرے معلوم رہے گزشتہ سال موسم گرما میں بوجوہ گرمی اور ضرورت سے زائد بچے بٹھائے جانے پر کئی بچے بے ہوش ہوگے تھے

متعلقہ خبریں

13-03-2018

13-03-2018