تین ماہ سے تنخواہوں سے محروم

مظفرآباد(خبرنگار)بہود آبادی کی 752ملازمین تین ماہ سے تنخواہوں سے محروم صدر ،وزیرا عظم ،وزراء اور اسمبلی ممبران کی مراعات اور تنخواہوں میں 300فیصد اضافہ،پاکستان میں بہود آبادی کے ملازمین کو نارمل میزانیہ پر لانے کے بعد آزادکشمیر میں بہود آبادی کے ملازمین کو نارمل میزانیہ پر لانے کے لیے مالی سال2017-18کے بجٹ میں 200ملین روپے رکھے گئے بجٹ مختص ہونے کے باوجود حکومت کی طرف سے نوٹیفکیشن نہ ہونے پر بہود آبادی کے ملازمین تین ماہ سے تنخواہوں سے محروم ہیں ذرائع کے مطابق محکمہ مالیات کی طرف سے بہود آبادی کی فائل حکومتی منظوری کے لیے وزیر اعظم سیکرٹریٹ بھیجی گئی تھی جس کے تحت 752ملازمین کو نارمل میزانیہ پر لانے سے قبل حکومت کی سطح سے اس فیصلے کا انتظار ہے کہ بہود آبادی کے تمام ملازمین کو نارمل میزانیہ پر لایا جائے یا اسامیاں مشتہر کرکے دوبارہ بھرتیاں کی جائیں حکومتی فیصلے میں تاخیر کی وجہ سے 3ماہ سے نوٹیفکیشن جاری نہ ہو سکا جسکی وجہ سے بہود آبادی کے ملازمین تین ماہ سے تنخواہ سے محروم ہیں بہود آبادی میں اس وقت درجنوں ایسے ملازمین ہیں جو حسب سفارش سلیکشن کیمٹیز ترقیاب بھی ہوئے اور اُن کی عمریں سرکاری نوکریوں کے حصول کے لیے مختص عمر سے تجاوزکر چکی ہیں حکومت کی طرف سے فیصلے میں تاخیر سے 752ملازمین کے گھروں میں فاقے ہیں جبکہ پانامہ لیکس سے متاثر حکومت آزادکشمیر بہود آبادی کے علاوہ دیگر درجنوں محکموں کے 3700سو سے زائد ایڈہاک اور عارضی ملازمین کو مستقل کرنے یا نہ کرنے کے بارے میں کسی حتمی فیصلہ پرپہنچنے سے قاصر ہے۔

متعلقہ خبریں

13-03-2018

13-03-2018