12

آزاد جموں و کشمیرہائی کورٹ نے بلدیاتی انتخابات کے لئے میٹرک کی شرط غیر آئینی قرار دیدی

ہائی کورٹ کے لارجر بینچ نے بلدیاتی انتخابات کے لئے میٹرک کی شرط غیر آئینی،عمر کی بالائی حد 25 سال سے کم کرتے ہوئے 21 سال کردی، عوامی حلقوں نے مطالبہ کیا ہے کہ میٹرک کے بجائے بی اے کی شرط ہونی چاہیے
آزادکشمیر میں بلدیاتی انتخابات میں سینکڑوں ایسے امیدوار حصہ نہیں لے سکے کیونکہ وہ میٹرک کی شرط کو پورا نہیں کرسکتے تھے،مگر اب بلدیاتی انتخابات مکمل ہونے کے بعد فیصلہ آنے سے انکے مداح پریشان ہیں

مظفرآباد(صباح نیوز) ہائی کورٹ آزاد جموں و کشمیر کے لارجر بینچ نے بلدیاتی انتخابات کے لئے میٹرک کی شرط غیر آئینی قرار دیدی،عمر کی بالائی حد 25 سال سے کم کرتے ہوئے 21 سال کردی،فیصلہ جاری۔بدھ کے روز عدالت العالیہ آزادکشمیر نے شہری عارف مغل بنام قانون آزادکشمیر ساز اسمبلی وغیرہ کا فیصلہ سنا دیا،جس کے مطابق آزادکشمیر میں بلدیاتی الیکشن لڑنے کے لیے عائد میٹرک کی شرط ختم کردی گئی۔ لارجر بینچ کی سربراہی سینئر جج جسٹس سردار حبیب ضیا کررہے تھے نے قانون ساز اسمبلی کی جانب سے بلدیاتی الیکشن لڑنے کے لئے میٹرک کی پابندی کو خلاف آئین قرار دے دیا۔امیدوار کی عمر بھی 25 سال سے کم کر21 سال کر دی گئی۔رٹ پٹیشن میں پٹیشنر کی جانب سے ہارون ریاض مغل ایڈووکیٹ نے پیروی کی۔ فیصلے کے بعد ہارون ریاض مغل ایڈووکیٹ نے کہا کہ قانون ساز اسمبلی کا الیکشن لڑنے کے لیے میٹرک کی کوئی شرط نہیں جبکہ اسی اسمبلی نے کونسلر کے لئے یہ شرط لاگو کر رکھی تھی جسے آج عدالت العالیہ نے کالعدم قرار دیدیا۔ یاد رہے کہ آزادکشمیر میں بلدیاتی انتخابات میں سینکڑوں ایسے امیدوار حصہ نہیں لے سکے کیونکہ وہ میٹرک کی شرط کو پورا نہیں کرسکتے تھے،مگر اب بلدیاتی انتخابات مکمل ہونے کے بعد فیصلہ آنے سے انکے مداح پریشان ہیں تاہم انڈر میٹرک امیدواروں نے اس فیصلے کوسراہتے ہوئے آیندہ الیکشن میں حصہ لینے کی خواہش ظاہر کی ہے۔دوسری جانب عوامی حلقوں نے مطالبہ کیا ہے کہ میٹرک کے بجائے بی اے کی شرط ہونی چاہیے مگر یہ شرط پہلے قانون ساز اسمبلی کے ممبران کے لئے ہونی چاہیے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں