22

راولاکوٹ،بغیر پارکنگ کمرشل پلازوں کی تعمیر،رانگ پارکنگ کے باعث انسانی جانوں کا ضیاع معمول

راولاکوٹ(پرل نیوز) انتظامی ومحکمانہ غفلت شہریوں کی جان لینے لگی، بغیر پارکنگ کمرشل پلازوں کی تعمیر، پارکنگ زون کی شہر میں عدم فراہمی،بغیر لائنسنس ڈرائیونگ، شہر بھر میں غیر قانونی بغیر نمبر پلیٹوں رکشوں کی بھر مار کی وجہ سے پونچھ کے ڈویژنل ہیڈ کوارٹر راولاکوٹ میں آئے روز قیمتی جانوں کا ضیاع ہو رہا ہے، گذشتہ روزہاوسنگ اسکیم پروائیوٹ ہسپتال کے سامنے موٹر سائیکل سوار حادثہ کا شکار ہوگئے،حادثہ کی وجہ سے موٹر سائیکل سوار شدید زخمی ہو گئے، جنہیں شیخ زید بن النہیان ہسپتال راولاکوٹ لے جایاگیا، جہاں سے روالپنڈی ریفر کیاگیا لیکن ایک نوجوان طالب علم زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے چل بسا، جبکہ دوسرئے نوجوان کی ٹانگ اور بازو میں شدید چوٹوں کی وجہ سے ابیٹ آبادریفر کر دیاگیا،، حادثہ کی بڑی وجہ رانگ پارکنگ اور غلط ڈرائیونگ قرار دی جارہی ہے،انتظامیہ جائے وقوعہ پر پہنچنے سے بھی قاصر رہی، نہ ہی ریسکیو ٹیمیں جائے وقوعہ پر پہنچ سکیں، محض مراعات حاصل کی جارہی ہیں جبکہ دوسری طرف شہری اپنی جانوں سے ہاتھ دھو رہے ہیں، متعدد مرتبہ میڈیا و دیگرفورم پر مسائل کو اجاگر بھی کیاگیا لیکن کوئی عملی اقدامات نہیں کیے جا رہے ہیں، جس کی وجہ سے عوام میں شدید غم و غصہ پایا جا رہا ہے، شہر بھر میں نہ صرف بغیر نمبر پلیٹ رکشوں کی بھرمار ہے بلکہ اہم شاہرات پر ریڑھی بانوں نے بھی قبضے جما رکھے ہیں، شہر بھر میں رکشہ ڈروائیوروں نے من مرضی سے اڈائے قائم کر رکھے ہیں، ٹریفک پولیس کی جانب سے کوئی جامع حکمت عمل نظر نہیں آ رہی ہے، مح ڈھنگ ڈپاو پالیسی اپنائی جارہی ہے، نہ ہی کوئی ٹریفک کا نظام بہتر کرنے کے لیے کوئی اقدامات کیے جا رہے ہیں مختلف عوامی رہنماوں نے اس پر شدید ردعمل کا اظہا رکرتے ہوئے کہا ہے کہ انتظامیہ کی غفلت کی وجہ سے آئے روز حادثات معمول بن چکے ہیں لیکن کوئی خاطر خواہ اقدامات نہیں کر رہے ہیں، جائے وقوعہ پر قبل ازیں بھی حادثات ہوچکے ہیں اور قیمتی جانوں کا ضیاع ہو چکا ہے لیکن اقدامات نہیں کیے گئے، پرائیوٹ پلازہ جات، سرکار عمارات سے اس اہم شاہراہ پر موجود ہیں لیکن کسی بھی پلازہ کی اپنی پارکنگ نہ ہونے کی وجہ سے مسائل پیدا ہو رہے ہیں، اہم شاہراہ پر پارکنگ کی عدم دستیابی کی وجہ سے رانگ پارکنگ معمول بن چکی ہے جس کی وجہ سے سڑک سکڑ کر محض چند فٹ ہی رہ جاتی ہے، اور حادثات کا باعث بن رہی ہے، گذشتہ روز مختلف مکاتب فکر کے زعمانے آئے روز حادثات کی روک تھام کے لیے مشترکہ حکمت عملی اپناتے ہوئے مطالبہ کیا ہے کہ فی الفور اقدامات کیے جائیں بصورت دیگر احتجاجی تحریکی چلائی جائے گی،

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں