13

مشرف کی طرح سلیکٹڈ بھی اب ماضی کا قصہ بن چکا، بلاول بھٹو

گڑھی خدا بخش (صباح نیوز)وزیر خارجہ بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ 15 سال گزر چکے ہیں، جب سے آپ کی بی بی شہید محترمہ بے نظیر بھٹو کو آپ سے چھینا گیا، میں آپ سب کو پاکستان پیپلز پارٹی کے تمام جیالوں اور پاکستان کے سیاسی کارکنوں کو سلام پیش کرتا ہوں۔سلیکٹڈ کے سہولت کار کو بھی بڑی عزت سے خدا حافظ کہہ دیا، یہ جیالوں کی کامیابی اور جمہوریت کا انتقام ہے، آصف زرداری، فریال تالپور کو جیلوں میں ڈالنے والوں کا آپ نے صیح بندوبست کر دیا، پہلی بار عدم اعتماد کے ذریعے فوج، عدالت نے نہیں پارلیمان نے وزیراعظم کو گھر بھیجا، وہ پہلا وزیر اعظم ہے جس کو دھاندلی سے نہیں نکالا گیا، جیالوں کا کریڈٹ وہ وائٹ ہاؤس، جوبائیڈن کو دینا چاہتا ہے، آپ کو امریکا نہیں بلاول ہاؤس کی سازش نے نکالا۔گڑھی خدا بخش میں بینظیر بھٹو کی 15 ویں برسی کے موقع پر جلسے سے خطاب کرتے ہوئے بلاول بھٹو کا کہنا تھا کہ دنیا کو اور اس سوچ کا بتانا چاہ رہا ہوں، جو سمجھ رہے تھے کہ بی بی کو شہید کرکے ان کی جماعت کے سفر کو روک سکتے تھے، بتانا چاہتا ہوں کہ گڑھی خدا بخش میں ایک نظر دوڑائیں یہاں پندرہ سال بعد بھی انسانوں کا سمندر ہے۔ انہوں نے کہا کہ شہید محترمہ بے نظیر کے جیالے آج بھی یہاں موجود ہیں، شہید محترمہ بے نظیر کے بہن بھائی اور سیاسی کارکن آج بھی یہاں موجود ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ 15 سال کے بعد بھی اس ملک، اس جماعت کے سیاسی کارکن اور ہمارے عوام نے شہید محترمہ بے نظیر بھٹو کو نہیں بھولے ہیں، آج بھی ہم ان کے سیاسی فلسفے پر چلتے ہیں، سیاسی نظریے کے مطابق چلتے ہیں۔ وزیر خارجہ نے کہا کہ ہم پوچھتے ہیں کہ وہ گناہ کیا تھا جس کی وجہ سے محترمہ بے نظیر بھٹو کو شہید کیا گیا، کیا یہ گناہ تھا کہ وہ ایک محب وطن پاکستانی تھیں، کیا ان کا گناہ یہ تھا کہ وہ نہ صرف پاکستان کی لیڈر تھیں بلکہ وہ تو عالمی دنیا کی لیڈر تھیں، وہ مسلم دنیا کی پہلی خاتون وزیر اعظم بن کر پوری مسلم امہ کا فخر تھیں۔ ان کا کہنا تھا کہ شہید محترمہ بے نظیر بھٹو جمہوریت کی علمبدار تھیں، وہ آمروں کے لیے خوف کی بنیاد تھیں، انتہا پسندوں اور دہشت گردوں کا منہ توڑ جواب تھیں۔ و

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں