21

وزیراعظم کی زیر صدار مسلم لیگ ن کا اجلاس پی ٹی آئی کے خلاف جارحانہ حکمت عملی اپنانے کی ہدایت

اسلام آباد(صباح نیوز) وزیراعظم شہباز شریف نے عوام کو زیادہ سے زیادہ ریلیف فراہم کرنے کا حکم د یتے ہوئے کہا ہے پی ٹی آئی حکومت اور موجودہ حکومت کے درمیان معاشی اقدامات کے فرق کو اجاگر کیا جائے،قوم کو حقائق بھی بتائیں گے کیونکہ جھوٹ کا توڑ کرنے کیلئے سچ لوگوں تک پہنچانا ضروری ہے۔ وزیراعظم شہباز شریف کی زیر صدارت مسلم لیگ (ن) کا مشاورتی اجلاس ہوا جس میں ملکی سیاسی صورتحال کا جائزہ لیا گیا، جبکہ پارٹی کی عوامی رابطہ مہم سمیت آئندہ عام انتخابات کی تیاریوں پر بھی بات ہوئی۔ اجلاس میں مسلم لیگ ن کی قیادت نے حکومت کی جانب سے ریلیف پر توجہ مرکوز کرنے کا فیصلہ کیاگیا۔اجلاس میں مسلم لیگ ن کی آئندہ کی سیاسی حکمت عملی پر مشاورت ہوئی، بلدیاتی انتخابات کی تیاریوں سے متعلق امور پر بھی غور ہوا، جب کہ فیصلہ ہوا کہ عوامی رابطہ مہم اور ن لیگی کارکنوں کو متحرک کیا جائے گا۔ وزیراعظم شہباز شریف نے ہدایت کی کہ آئندہ سیاسی اجتماعات میں حکومتی معاشی اقدمات اور ریلیف کو اجاگر کیا جائے۔وزیر اعظم شہبازشریف نے عوام کو زیادہ سے زیادہ ریلیف دینے کی ہدایت کرتے ہوئے پارٹی رہنماؤں کو پنجاب میں کارکنوں کو متحرک کرنے اور پی ٹی آئی کا جھوٹا بیانیہ بے نقاب کرنے کا ٹاسک بھی دے دیا۔وزیراعظم نے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ اتحادی حکومت نے تباہ حال معیشت کو آ کر سنبھالا، عمران خان کی پالیسیاں ملک کو سری لنکا کی سی صورتحال کی طرف لے جارہی تھیں، اتحادی حکومت عوام کو مزید ریلیف دینے کے اقدمات کررہی ہے۔وزیراعظم کا کہنا تھا کہ عمران خان نے نہ صرف معیشت بلکہ سیاست اور اخلاقیات کو بھی تباہ کردیا، عوام کو ریلیف فراہم کریں گے، اور ساتھ ہی حقائق بھی ان کے سامنے رکھے جائیں گے۔شہباز شریف نے مزید کہا کہ پی ٹی آئی حکومت اور موجودہ حکومت کے درمیان معاشی اقدامات کے فرق کو اجاگر کیا جائے، ورکرز کنونشن میں حکومتی پالیسیوں کو مثبت انداز میں اجاگر کیا جائے۔شہباز شریف نے ڈیجیٹل و سوشل میڈیا ٹیم کو میڈیا پر پی ٹی آئی پروپیگنڈے کا موثر جواب دینے کی ہدایت کرتے ہوئے کہا کہ عام آدمی تک پارٹی کا پیغام پہنچانے کیلئے سوشل میڈیا کا سہارا لیا جائے، جھوٹ کا توڑ کرنے کیلئے سچ لوگوں تک پہنچانا ضروری ہے۔وزیراعظم نے پارٹی قیادت کو ہدایت کی کہ حکومتی معاشی اقدامات اور ریلیف کو اجاگر کیا جائے جبکہ ملک کے دیوالیہ ہونے کے حکومت مخالف بیانیے کی جتنا ہو سکے نفی کریں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں