2

ڈاکٹر رخسانہ بشیر پر 2 کروڑ روپے جرمانہ،فوجداری کارروائی عمل میں لائی جائے،سلمیٰ زاہد

راولاکوٹ(پرل نیوز) ورثا سلمیٰ زاہد، سردار زاہد خان،سردار رضاخان، سردار اویس فاضل خان نے کہا ہے کہ ڈاکٹر رخسانہ بشیر گائنی کالوجسٹ کی غفلت و لاپروائی کی وجہ سے مریضہ معذور ہو چکی تھیں اور اس کے ایک گردہ،مثانہ،یوٹروس مکمل طورپر غیر فعال ہو چکے ہیں، اس حوالے سے ایڈیشنل ڈسٹرکٹ جج راولاکوٹ کی عدالت میں دعویٰ دائر کیاگیا تھا جس پر ایڈیشنل ڈسٹرکٹ جج نے فیصلہ سناتے ہوئے ڈاکٹر رخسانہ بشیر کومبلغ 20لاکھ جرمانے ادا کرنے کا حکم سنا دیا ہے، جو احسن اقدام ہے لیکن کونسل مریضوں سردار عبدالصمد ایڈووکیٹ نے مذکورہ فیصلہ کو عدالت العالیہ میں چلینج کرتے ہوئے موقف اختیار کیاہے کہ کیا انسانی جان کی قیمت محض 20لاکھ روپے ہے، ڈاکٹر نے مریضہ کو پرائیوٹ ہسپتال میں آپریشن نہ کروانے کی سزا عمر بھر کی معذوری کی صورت میں دی، جس کو قطعی نظر رکھتے ہوئے محض 20لاکھ روپے جرمانہ عائد کیاگیا مذکورہ ڈاکٹر کو دوسرئے مریضوں کی زندگیوں کیساتھ کھیلنے کا لائنسنس مہیا کرنے کے مترادف ہے، اپیل میں استدعا کی گئی ہے کہ اس مقدمہ کو مثالی بناتے ہوئے مذکورہ ڈاکٹر رخسانہ بشیرپر 2کروڑ روپے جرمانہ عائد کیا جائے اور فوجداری کاروائی بھی عمل میں لائی جائے تاکہ انسانی زندگیوں کیساتھ کھیلنے والوں کو نشان عبرت بنایا جا سکے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں