11

ہندوستان آزادکشمیر،گلگت پر قبضہ کرناچاہتا ہے،حکومت جی بی سٹیٹ سبجیکٹ قانون دوبارہ بحال کرئے فاروق حیدر

ہٹیاں بالا (پرل نیوز)سابق وزیراعظم آزاد حکومت ریاست جموں کشمیر و مرکزی نائب صدر پاکستان مسلم لیگ ن راجہ محمد فاروق حیدر خان نے کہا ہے کہ عمران خان کی اس”تجویز کہ مصر اور سری لنکا کی طرز پر پاک فوج کی تعداد بھی نصف کی جائے“ سے یہ بات سامنے آ گئی ہے کہ وہ ملک دشمن ایجنڈے پر ہیں،ا س سے بڑی ملک دشمنی کوئی نہیں ہندوستان گلگت اور آزادکشمیر پر قبضہ کرنا چاہتا ہے فوج میں کمی مودی کے بیانیہ کی تائید ہے جس کے خلاف سب کو ایک ہونا چاہیے، یہ ملک کے ساتھ غداری کے مترادف ہے، مقبوضہ جموں کشمیر سے آٹا لینے کے نعرے لگانے والوں کو وہاں مظلوم عوام کے اوپر ہندوستانی ظلم جبر اور بہنوں کی عصمت دری کے واقعات نظر نہیں آتے، اس سے بڑی بے غیرتی اور کیا ہوگی کہ ان کی عزتیں محفوظ نہیں اور کچھ شر پسند وہاں سے آٹا لینے کی بات کرتے ہیں، ہم عزت غیرت پر سب کچھ قربان کرسکتے ہیں مظلوم بھائیوں بہنوں کے قاتلوں عزت کو تار تار کرنے والوں سے سمجھوتہ نہیں کرسکتے، یہ سارا نظام اسی وجہ سے قائم ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہندوستان کے ساتھ مذاکرات کے لئے یہ وقت مناسب نہیں ہے، 370 کی ہمارے لیے کوئی حیثیت نہیں 35 اے اصل مسئلہ ہے جسے مہاراجہ نے نافذ کیا تھا ہم بامقصد مذاکرات کے حامی ہیں مگر برابری کی سطح پر ہوں اور اس میں تینوں فریق پاکستان ہندوستان اور کشمیری شریک ہوں۔حکومت پاکستان گلگت بلتستان میں سٹیٹ سبجیکٹ قانون دوبارہ بحال کرے۔ان خیالات کا اظہار راجہ محمد فاروق حیدر خان نے حلقہ چکار کے نومنتخب ممبران ضلع کونسل یونین کونسل ٹاون کمیٹی و وارڈز کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوے کیا۔اس موقع پرممبران ضلع کونسل سابق ضلعی صدر مسلم لیگ ن فرید خان،مرزا آصف،قاضی شمیم میر خالد لطیف و دیگر نے بھی خطاب کیا۔ سابق وزیراعظم راجہ محمد فاروق حیدر خان نے کہا کہ آزادکشمیر کے بلدیاتی انتخابات میں حکومت کی بدترین مداخلت کے باوجود حکومت کو شکست فاش دینے پر کارکنان مسلم لیگ ن اور عوام کا شکریہ،ضلع جہلم ویلی میں ہزاروں کی تعداد میں ناراض ساتھیوں کی واپسی کا خیرمقدم کرتے ہیں بلدیاتی انتخابات میں پارٹی ڈسپلن کی خلاف ورزی کرنے والوں کے حوالے سے کمیٹی قائم کی جائیگی، قومی معاملات پر سیاسی کارکنان کو بھی اپنا جاندار کردار ادا کرنا چاہیے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں