کشمیر کسی کی جاگیر نہیں جو چاہے تقسیم کر دے ,بلدیاتی انتخابات کے مخالف نہیں ہیںلیکن ہمارے تحفظات ہیں فاروق حیدر

کشمیر کسی کی جاگیر نہیں جو چاہے تقسیم کر دے ,بلدیاتی انتخابات کے مخالف نہیں ہیںلیکن ہمارے تحفظات ہیں فاروق حیدر کشمیری قوم سے غداری نہیں کر سکتا تیرویں آئینی ترامیم کو ختم کرنے کے بارے میں کوئی سوچ بھی نہیں سکتا پاکستان کے ساتھ کشمیر کے الحاق ہونے کے مخالف نہیں مگر بغیر نکاح کیئے لے جانے کے مخالف ہیں، سابق وزیر اعظم ہٹیاں بالا(بیورورپورٹ) سابق وزیر اعظم راجہ محمد فاروق حیدر خان نے کہا ہے کہ کشمیر کسی کی جاگیر نہیں جس کا دل چاہے اس کو تقسیم کر دے ہم پاکستان کے ساتھ کشمیر کے الحاق ہونے کے مخالف نہیں مگر بغیر نکاح کیئے لے جانے کے مخالف ہیں آزاد کشمیر کو نہ اس طرح تقسیم ہونے دیں گے اور نہ ہی صوبہ بننے دیں گے میں کشمیری قوم سے غداری نہیں کر سکتا تیرویں آئینی ترامیم کو ختم کرنے کے بارے میں کوئی سوچ بھی نہیں سکتا اور نہ ہم اس کو ختم ہونے دیں گے نئی ترامیم لانے کی باتیں کرنے والے اس بات کو سمجھ لیں کشمیر صرف کشمیریوں کا ہے اس پر حکومت کشمیری ہی کریں گے اس کا فیصلہ کرنے کا حق بھی صرف اور صرف کشمیریوں کو ہی ہے آزاد کشمیر بجلی پیدا کرتا ہے اس کو پیدا کرنے کا زریعہ پانی ہے مگر فیول ایڈجسٹمنٹ بجلی کے بلوں میں دینا ناانصافی ہے کشمیری قوم کے ساتھ یہ ناانصافی ہم کسی صورت نہیں ہونے دیں گے 12 اگست کے روز کوہالہ سے لائن آف کنٹرول چکوٹھی اور نیلم تک عوام نے سڑکوں پر نکل کر جو پیغام دے دیا میں تمابوڑھوں، نوجوانوں اور بچوں کا بے حد مشکور ہوں جنہوں نے بیداری کا ثبوت دیا یہ شعور اس بات کا ثبوت ہے کہ آزاد کشمیر کے عوام اپنے حقوق کے لیے ہر وقت ہوشیار ہیں۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے ہٹیاں بالا کے نواحی علاقے نوگراں میں اقبال اعوان کی رہائشگاہ پر لیگی کارکنان کے اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔تقریب کاآغاز تلاوت کلام پاک سے کیا گیا جس کی سعادت سابق ایڈمنسٹریٹر بلدیہ قاضی شمیم احمد نے حاصل کی کارکنان مسلم لیگ ن کے اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے صابر اعوان نے سابق وزیر اعظم آزاد کشمیر راجہ محمد فاروق حیدر خان کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ آپ نے آزاد کشمیر کی تاریخ میں وہ عظیم کارنامے سرانجام دیے جن کی مثال آزاد کشمیر کی سابقہ تاریخ میں نہ ملتی ہے اور نہ آئندہ مل سکے گی محمد صابر اعوان نے کہا کہ آزاد کشمیر کے اندر مسلم لیگ ن کی حکومت کے دوران آزاد کشمیر میں تیرویں ترامیم کے زریعے آزاد کشمیر کو نہ صرف بااختیار ہونے کا درجہ دیا بلکہ ایک خود کفیل اور خود انحصار ریاست کو وجود بخشا اس کے علاوہ ختم نبوت جیسے قانون کو اسمبلی کے اندر منظور کروانا کوئی آسان کام نہ تھا کارکنان مسلم لیگ ن سے خطاب کرتے ہوئے سابق ایڈمنسٹریٹر ضلع کونسل محمد فرید خان نے کہا کہ راجہ محمد فاروق حیدر خان جیسے لیڈر صدیوں بعد بھی پیدا نہیں ہوتے انہوں نے کہا کہ ہم اللہ تعالی کا جتنا شکر ادا کریں کم ہے ہم میں ایک بہادر ،نڈر ،اور دلیر لیڈر موجود ہیں جو آنکھوں میں آنکھیں ڈال کر بات کرنے کی صلاحیت رکھتے ہیں کارکنان سے خطاب کرتے ہوئے سابق امیدوار و رہنما مسلم لیگ ن حلقہ سات لیاقت علی اعوان نے راجہ محمد فاروق حیدر خان کا نوگراں آمد پر شکریہ بھی ادا کیا کارکنان سے خطاب کرتے ہوئے محمد اقبال اعوان،ملک سلیم ،محمد صابر اعوان، یاسر اعوان،مطلوب اعوان ،میڈیا کوارڈینیٹر فاروق حیدر فورس موصیب اکرم ،میڈیا کوارڈینٹر فاروق حیدر فورس جہلم ویلی راجہ وسیم، بانی فاروق حیدر فورس راجہ ارشد، فرید خان، قاضی شمیم ،قاضی وقاص اور دیگر نے بھی فاروق حیدر کے اقدامات کو سراہا۔راجہ محمد فاروق حیدر خان نے مزید کہا کہ آزاد کشمیر حکومت نے ابھی مزید اختیارات لینے ہیں جو ہمارے پاس ابھی نہیں ہیں تانکہ آزاد کشمیر حکومت کو ریاست جموں و کشمیر کی ایک نمائندہ حکومت بنا کر دنیا کے سامنے پیش کیا جائے مزید اختیار لینا کوئی سیاست نہیں ہے بلکہ اس کا مسئلہ کشمیر سے اہم تعلق ہے راولاکوٹ کے عوام بھی شکر گذار ہیں جنہوں نے جوانمردی سے مقابلہ کیا آزاد کشمیر میں بجلی پانی سے پیدا ہوتی ہے فیول ٹیکس فوری ختم ہونا چاہیے اس کی کوئی جوازیت نہیں ہے کوئی ممبر اسمبلی سپیکر کے سامنے آزاد کشمیر کا سٹیٹس تبدیل کرنے کی ترمیم پیش نہیں کرسکتا ہے اسے اسمبلی سے باہر نہیں نکلنے دیں گے اور نہ آزاد کشمیر کے لوگ اسے چھوڑیں گے ہمارے جیتے جی کشمیر کی تقسیم نہیں ہو سکتی ہے لیکن کبھی کبھی حادثے ہو جاتے ہیں اس کے لیے عوام کو تیار رہنا چاہیے تیرویں ترمیم میں ہم نے قدرتی وسائل کو آزاد کشمیر کے عوام کا حق قرار دیا تھا اس لیے کسی بھی قیمت پر ٹورازم اٹھارٹی قابل قبول نہیں ہے اللہ کا شکر ادا کرتا ہوں نواز شریف نے مجھ پر اعتماد کیا دو بار وزیر اعظم بنا پارٹی کا صدر رہا مجھے کسی عہدہ کی ضرورت نہیں ہے میری جہدوجہد صرف عوام کے حقوق کے لیے ہے عوام کو لوٹانے کی اب میری ذمہ داری ہے کہ میں ان کو لوٹائوںمیری کوئی گردن بھی اڑا دے میں آزاد کشمیر کے عوام کے حقوق سے نہیں ہٹوں گامیں نے اپنی زندگی تحریک آزاد ی کشمیر اور آزاد کشمیر کے لوگوں کے حقوق کے لیے وقف کردی ہے راجہ فاروق حیدر نے مزید کہا کہ بلدیاتی انتخابات کے مخالف نہیں ہیںلیکن ہمارے تحفظات ہیںانھیں دور کرنے کی ضرورت ہے کوئی شخص بلدیاتی انتخابات کا مخالف نہیں ہے اپنی حکومت میں بھی میں نے بلدیاتی الیکشن کروانے کی کوشش کی لیکن بعض ساتھیوں کے تحفظات کے باعث نہیں ہو پائے سپریم کورٹ کا فیصلہ سر آنکھوں پر ہے لیکن انتظامیہ نے بھی اپنی مرضی کی حلقہ بندیاں شروع کردیںحکومت اور کوئی بھی سیاسی جماعت بلدیاتی الیکشن سے بھاگ نہیں رہے ہیں جو مسائل ہیں انھیں دور کرنے کی ضرورت ہے لیکن اسمبلی کو حق حاصل ہے وہ اس حوالہ سے کوئی بھی آئینی ترمیم کر سکتی ہے

متعلقہ خبریں